فرانس: پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کیخلاف احتجاج جاری

نیوز ڈیسک (ریپبلکن نیوز) فرانس میں پیٹرولیم منصوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف ہزاروں افراد نے معروف شاہراہ شانزلیز ے پر بھرپور احتجاج کیا

مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے پولیس نے سے واٹر کینن اور آنسوگیس کا بے دریغ استعمال کیا، دن بھر پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں اور آنکھ مچولی جاری رہی۔

مظاہرین نے درجنوں گاڑیوں کو الٹ کر چوراہوں میں رکھ کر آگ لگا دی۔

مظاہرے کے دوران پولیس اہلکاروں سمیت درجنوں افراد زخمی ہوگئے جبکہ پولیس نے 131افراد کو گرفتار کرلیا۔

تین ہفتوں سے جاری ان مظاہروں میں روڈ بلاک کے باعث کروڑوں یورو کا نقصان ہوچکا ہے۔

زیرزمین ٹرین، ریسٹورنٹ، کیفے بار اور کمرشل سینٹر بند رہنے سے مالکان کو مالی نقصان ہورہا ہے جبکہ اکثر شاہراہوں پر ٹول ادائیگی بند ہونے سے حکومت کو ریونیو کی مد میں نقصان کا سامنا ہے۔

پیلی جیکٹ کے مظاہرین کو کنٹرول کرنے کےلئے جندہ میری پولیس گذشتہ ایک ہفتے سے پیرس میں موجود ہے تاہم اس کے استعمال کی ضرورت پیش نہیں آئی۔

میڈیا سروے رپورٹس کے مطابق مظاہرین کو 80 فیصد عوام کی مکمل حمایت حاصل ہے جبکہ تمام ٹریڈ یونین اور اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں کی طرف مکمل اظہار یکجہتی کا اعلان بھی سامنے آیا۔

پیلی جیکٹ کا اعلان ہے کہ صدر ایمانیول ماکغوں کے مستعفی ہونے تک احتجاج جاری رہےگا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close